اپر چترالخبریںسفر کہانی

چترال میں سیاحت کی فروع اور غیر ملکی سیاح ۔

چترال ( جمشید احمد ) کسی زمانہ تھا چترال سیاحوں بلخصوس غیر ملکی سیاحوں کا جنت سمجھا جاتاتھا ہر سال مئی کے مہینے میں چترال بازار میں سیاحوں کی رش ہوتی تھی اور چترال شہر سے یہ سیاح اپر چترال کی مختلف سیاحتی مقامات کی طرف رخ کرتے اکثر غیر ملکی سیاح تریچ ویلی اور کوہ ہندو کش تریچمیر کی سیر کو پسند کرتے ہر سال سیکڑوں سیاح براستہ موڑکھو تریچ جاتے ہوتے دیکھی جاتی مجھے یاد ہے جب ہم چھوٹے تھے تو غیر ملکی سیاح میرے گاون موڑکھو وریجون اتے اور وریجون میی کھلے جگہوں بڑے بڑے سبزہ زار اور گھاس ایریا میں کمپینگ کرتے علاقے کے خوشگوار قدرتی ماحول سے لطف اندوز ہوتے مقامی لوگ ان غیر ملکی سیاحوں کو مقامی زبان میں فرانگی کہتے اور ان کو دیکھ کر بہت خوش ہوتے ان کے اردگرد جمع ہوتے اور مجھے یہ بھی یاد ہے کہ میرے ایک رشتہ دار اس وقت ان غیر ملکی سیاحوں سے گائیڈ کے طورپر کام کرتے تھے اس کے ہمراہ سیاح میرے غریب خانے میں ہر سال ایا کرتے اور مہمان خانوں کے سامنے گھاس میں ڈھیرا دیتے اور پرامن قیام کرتے اور پرامن رات گزرتے اس زمانے کی ایک غیر ملکی خاتون سیاح کی لی گئی ہماری بچپن کی تصویر کئی سالوں تک میرے مہمان خانے میں تھے۔ اس وقث اکر سیاح پیدل سفر کرتے جب ترچمیر کی سیر کے لیے اتے تو موڑکھو کا راستہ استعمال کرکے وریجون سے براستہ تریچ ان زائینی پاس ہوتے ہوئے تریچ کے اخری گاون شاگروم جاتے اور وہاں قیام کرتے تریچ کے عوام کی طرف سے ان کی سخت اوبگھت ہوتی ان کی قدر کرتے سیاحوں کی طرف سے بھی ان لوگون کو فایدہ پہنچتی سیاح ان کو اپنے ساتھ گائیڈ لیتے اور بغض جفاکش لوگ سیاحوں کے سامان کمرہ ان کے ساتھ لیکر تریچمیر کے بیس تک لے جاتے جس سے علاقےکے لوگون کو فائدہ ہوتے ررائع معاش کا زرئع بھی ہوتے تھے۔
جب بدقسمتی سے 9/11 کا واقعہ پیش ہوا تو پورا ملک میں بے چینی پیدا ہوئی دھشت گردی سے سب خوفزادہ ہوئے سیاحت متاثر ہوئی سیاحوں سیاحتی مقامات کی سیر کو چھوڑ دئیے جس سے سیاحتی علاقوں کو شدید نقصان پہنچا اب اللہ کی فضل کرم سے ہرجگہ امن وامان ہے سیاح سیاحتی مقامات جاتے ہیں جس سے سیاحت کو فروع ملی ہے۔

اج کئی سالوں بعد غیر ملکی سیاحوں کی موڑکھو لون اپر چترال آمد , اہل علاقہ نے بھر پور انداز میں خوش امدید کہا مہمانوں کے اعزاز میں پولو گراونڈ لون میں پولو کا اہتمام کیا گیا اور مہمانوں سے گھڑسواری بھی کرائی گئ ۔

Advertisement
Back to top button